Petroleum sellers introduced one other nationwide strike on Thursday.

0

[ad_1]

پیٹرولیم ڈیلرز نے جمعرات کو ملک بھر میں ایک اور ہڑتال کا اعلان کر دیا

The Pakistan Petroleum Sellers Affiliation (PPDA) has referred to as for an additional indefinite nationwide strike beginning Thursday, November 25.

Accordingly, petrol pumps throughout Pakistan will stay closed till the federal government proclaims a rise of their revenue margins.

Distributors stated they would supply solely gas to the ambulances in order that they might proceed their every day work with out interruption.

The PPDA highlighted that if the federal government will increase the revenue margin earlier than November 25, their protest might change.

Sources advised ProPakistani {that a} proposal submitted to the Financial Co-ordination Committee (ECC) yesterday really useful a rise in revenue margins in gentle of the latest name for a nationwide strike by petroleum sellers a number of weeks in the past. He added that no follow-up resolution has been issued on the proposal to date.

In line with sources, the following ECC assembly will not be prone to happen anytime quickly as Federal Minister for Financial Affairs Division Omar Ayub Khan, who additionally presides over the ECC assembly, is in another country.

It additionally reveals that the PPDA is prone to proceed its nationwide strike, which can make it tough for the individuals to entry gas within the coming days.

Amid rising gas costs, the potential of rising revenue margins can be a matter of concern for the general public, because it might result in additional rise in gas costs.

Gasoline is a primary want that’s turning into unaffordable when it comes to affordability. Given these issues of the general public and petroleum sellers, it is going to be attention-grabbing to see who the Petroleum Division decides extra in favor of.

پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن (پی پی ڈی اے) نے جمعرات 25 نومبر سے شروع ہونے والی غیر معینہ مدت کے لیے ایک اور ملک گیر ہڑتال کی کال دی ہے۔

اس کے مطابق، پاکستان بھر میں پیٹرول پمپ اس وقت تک بند رہیں گے جب تک حکومت ان کے منافع کے مارجن میں اضافے کا اعلان نہیں کرتی۔

دکانداروں نے کہا کہ وہ ایمبولینسوں کو صرف ایندھن فراہم کریں گے تاکہ وہ بغیر کسی رکاوٹ کے اپنے روزانہ کام جاری رکھ سکیں۔

پی پی ڈی اے نے روشنی ڈالی کہ اگر حکومت 25 نومبر سے پہلے منافع کے مارجن میں اضافہ کرتی ہے تو ان کا احتجاج تبدیل ہو سکتا ہے۔

ذرائع نے پروپاکستانی کو بتایا کہ گزشتہ روز اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) کو پیش کی گئی ایک تجویز میں پٹرولیم ڈیلرز کی چند ہفتے قبل ملک گیر ہڑتال کی حالیہ کال کی روشنی میں منافع کے مارجن میں اضافے کی سفارش کی گئی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس تجویز کے بارے میں ابھی تک کوئی فالو اپ فیصلہ جاری نہیں کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ای سی سی کا اگلا اجلاس جلد ہی کسی وقت نہیں ہونا ہے کیونکہ وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور ڈویژن عمر ایوب خان، جو ای سی سی کے اجلاس کی صدارت بھی کرتے ہیں، ملک سے باہر ہیں۔

اس سے یہ بھی ظاہر ہوتا ہے کہ پی پی ڈی اے کی جانب سے ملک گیر ہڑتال جاری رہنے کا امکان ہے جس سے عوام کو آنے والے دنوں میں ایندھن کی دستیابی میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

ایندھن کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے درمیان، منافع کے مارجن میں اضافے کا امکان بھی عوام کے لیے تشویش کا باعث ہے، کیونکہ اس سے ایندھن کی قیمتوں میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔

ایندھن ایک بنیادی ضرورت ہے جو قابل استطاعت کے لحاظ سے ناقابل حصول ہوتی جا رہی ہے۔ عوام اور پیٹرولیم ڈیلرز کے ان خدشات کے پیش نظر یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ پیٹرولیم ڈویژن کس کے حق میں زیادہ فیصلہ کرتا ہے۔

[ad_2]

Previous articleSAMAA TV Information Headlines 12am – 24 November 2021
Next articleFellow Rida Rizvi and her 4th graders in Sihala

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here